Home / اردو / نیوز اینڈ میڈیا / برطانوی حکومت حج وعمرہ انڈسٹری کو ملکی قوانین کے تابع کرے، راجرگاڈ سیف

برطانوی حکومت حج وعمرہ انڈسٹری کو ملکی قوانین کے تابع کرے، راجرگاڈ سیف

برمنگھم(پ ر) برطانوی ہاؤس آف پارلیمنٹ میں اس وقت تاریخ رقم کی گئی جب پہلی بار پارلیمنٹ میں عازمین حج و عمرہ کے مسائل اور مشکلات کو زیر بحث لایا گیا۔ برمنگھم سمال ہیتھ اور سپارک بروک کے انتخابی حلقہ سے تعلق رکھنے والے پارلیمنٹ کے ممبر راجر گاڈ سیف کی تحریک پر ہونے والی اس تاریخی بحث میں راجر گاڈ سیف نے اپنے خطاب میں پارلیمنٹ کو برٹش مسلمانوں کے لئے حج و عمرہ کی اہمیت سے اجاگر کرتے ہوئے اس امر پر سخت افسوس کا اظہار کیا کہ اس انتہائی اہم فریضہ کی ادائیگی کے لئے بہت سارے برٹش عازمین حج و عمرہ کو بعض ٹوراینڈ ٹریول آپریٹرز کی وجہ سے سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، عازمین فراڈ کا شکار ہو رہے ہیں اور ان سے حج و عمرہ ٹریول پیکیج کے لئے بھاری رقوم وصول کرنے کے بعد انہیں ٹریول، رہائش اور دیکھ بھال کی مناسب سہولتیں فراہم نہیں کی جارہیں اور بعض صورتوں میں ٹورآپریٹرز عازمین سے بھری رقوم لے کر غائب ہو گئے۔ برٹش عازمین حج و عمرہ اپنی کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے ٹریول اینڈ ٹورآپریٹرز پر اعتماد کرتے ہیں لیکن بعض ٹورآپریٹرز ان کے اس اعتماد کو بری طرح مجروح کر رہے ہیں۔ عازمین کی مشکلات و مسائل کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ عازمین ان ملکی قوانین سے باخبر نہیں ہوتے جو کہ کسی فراڈ یا مشکل صورتحال میں ان کو تحفظ اور مدد فراہم کرتے ہیں۔

راجرگاڈ سیف ایم پی نے پارلیمنٹ میں اپنے خطاب میں گورنمنٹ پر اس امر پر بھی زور دیا کہ برٹش عازمین حج و عمرہ کے ساتھ ہونے والے ناروا سلوک کو ختم کرنے کے لئے حج و عمرہ انڈسٹری کو ملکی قوانین کے تابع کر کے عازمین کا اعتماد بحال کیا جائے اوراس کے لئے اگر نئے قوانین متعارف کروانے پڑیں تو حکومت کو ایسا کرنا چاہیے۔

حکومت کی جانب سے اس بحث میں حصہ لیتے ہوئے وٹفورڈ کی ممبر آف پارلیمنٹ کلیئراوارڈ نے کہا کہ حکومت برٹش عازمین حج و عمرہ کو درپیش مشکلات اور مسائل سے آگاہ ہے اور ان پر افسوس اور دکھ کا اظہار کرتی ہے۔ حکومت کے مختلف ادارے عازمین کی مدد اور ان کے مسائل کے حل کیلئے مشترکہ طور پر کاوشیں کررہے ہیںلیکن عازمین کو بھی ملکی قوانین کے مطابق اپنے حقوق سے آگاہی ہونی چاہئے اور اس کے ساتھ ساتھ ٹوراینڈ ٹریول آپریٹرز کو انہی ملکی قوانین کے مطابق بھاری رقوم کی وصولی کے عوض اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنا ہوگا۔ حکومتی موقف کو بیان کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ حکومت ان مسائل کے حل کیلئے انتہائی سنجیدہ ہے۔ عازمین کے ساتھ روا رکھا جانے والا سلوک ناقابل قبول اور ناقابل برداشت ہے۔ تمام متاثرین عازمین اپنی شکایات اپنے ایم پی اور ٹریڈنگ سٹینڈرڈ تک ضرور پہنچائیں تاکہ حکومت کو آگاہی رہے اور متاثرین کی مدد کی جا سکے۔

ایسوسی ایشن آف برٹش حجاج نے مسلم کمیونٹی کی جانب سے راجرگاڈ سیف ایم پی کو زبردست خراجِ تحسین پیش کرتے ہوئے اپنے بیان میں کہا ہے کہ راجرگاڈ سیف ایم پی نے ہاؤس آف پارلیمنٹ میں پہلی بار برٹش عازمین حج و عمرہ کے مسائل کو جس پرزور طریقہ سے اجاگر کیا ہے وہ قابل تقلید اور قابل تحسین ہے اور یہ ایک ایسا تاریخی اقدام ہے جس کی وجہ سے برٹش عازمین حج و عمرہ کے لئے اس ملک میں ایک بہتر نظام قائم کرنے میں مدد ملے گی۔

Leave a Reply

Scroll To Top